Home / بزنس / صنعت و تجارت کی بہتری کے لئے جامع تجارتی پالیسی جاری کی جائے۔ریفنڈز بلا تاخیر جاری کئے جائیں۔ کاروباری طبقہ کی مشکلات کم کی جائیں: میاں انجم نثار، میاں نعمان کبیر

صنعت و تجارت کی بہتری کے لئے جامع تجارتی پالیسی جاری کی جائے۔ریفنڈز بلا تاخیر جاری کئے جائیں۔ کاروباری طبقہ کی مشکلات کم کی جائیں: میاں انجم نثار، میاں نعمان کبیر

صنعت و تجارت کی بہتری کے لئے جامع تجارتی پالیسی جاری کی جائے۔ریفنڈز بلا تاخیر جاری کئے جائیں۔ کاروباری طبقہ کی مشکلات کم کی جائیں: میاں انجم نثار، میاں نعمان کبیر
ملکی معیشت کو بہتر بنانے کے لئے شرح نمو میں اضافہ ناگزیر ہے ۔ بجٹ اور جاری کھاتوں کے خسارے کو مزید کم کرنے کی ضرورت ہے
درآمدات کی بجائے برآمدات بڑھانے والی پالیسان ترتیب دی جائیں اور اکانومی کوامداد پر چلنے والی معیشت نہ بننے دیا جائے :سابق وفاقی وزیر سرتاج عزیز

لاہور (پریس ریلیز)سابق وفاقی وزیر خزانہ اور معاشی امور کے ماہر سرتاج عزیز نے پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) ایگزیکٹو کمیٹی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملکی معاشی صورتحال میں بہتری کے لئے گروتھ ریٹ میں اضافہ کیا جائے اس مقصد کے لئے انویسمنٹ ٹو جی ڈی پی اور ٹیکس ٹو جی ڈی پی کا تناسب بڑھایا جائے ۔ شرح نمو میں اضافہ کے لئے بجٹ اور جاری کھاتوں کے خسارے کو کم کرنے کی ضرورت ہے۔موجودہ شرح نمو جو اس وقت3.5 فیصد ہے اس میں کم از کم6 فیصدتک لایا جائے، آبادی میں تین فیصد اضافہ ہو رہا ہے جنھیں کھپانے کے لئے شرح نمو کو بڑھانا از حد ضروری ہے ورنہ غربت ،بیروزگاری امن و امان، فوڈ سیکورٹی اور برین ڈرین کے سنگین مسائل جنم لیں گے۔ گزشستہ روز معاشی صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے پیاف کے پیٹرن انچیف میاں انجم نثار اور چیئرمین پیاف میاں نعمان کبیر اور دیگر مجلس عاملہ اراکین کی موجودگی میں سرتاج عزیز نے کہا کہ شرح نمو بڑھانے سے تعلیم صحت توانائی اور انفرا سٹرکچر جیسے اہم امور پر توجہ دی جا سکے گی جس کے لئے انقلابی اقدامات کرنا ہوں گے۔سی پیک منصوبہ کی تکمیل سے پاکستان میںغیر ملکی سرمایا کاری میں اضافہ کے ساتھ ساتھ ملکی معیشت کی شرح نمو میں بھی مزید بہتری واقع ہو گی۔درآمدات کی بجائے برآمدات والی پالیسان ترتیب دی جائیں اور اکانومی کوامداد پر چلنے والی معیشت نہ بننے دیا جائے۔ پاکستان میں تجارت و صنعتی سرگرمیوں کے فروغ اور توانائی کے شعبے کی بہتری سے ہی قومی معیشت کی شرح نمو بڑھے گی ۔ اس موقع پر پیٹرن انچیف پیاف میاں انجم نثار اور چیئرمین پیاف میاں نعمان کبیر نے سابق وفاقی وزیر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اشیاءاور خدمات کی پیداواری لاگت زیادہ ہونے کی وجہ سے انڈسٹریز اور ٹریڈرز کو نقصان پہنچ رہا ہے کاروباری برادری کی مشکلات میں کمی لائی جائے۔ درآمدات میں اضافے کی وجہ سے سرمایہ کاری اور صنعت میں اضافہ ٹھیک مگربرآمدات میں کمی کی وجہ سے تجارتی خسارہ بڑھتا جا رہا ہے جس کو توازن میں رکھنا لازمی ہے ۔ملکی معیشت کو ایک جامع تجارتی پالیسی کی اشد ضرورت ہے جو برآمدات کو بڑھائے اور غیر ضروری درآمدات کو گھٹائے تاکہ معیشت مظوط بنیادوں پر استوار ہو سکے۔ کاروباری طبقہ مہنگائی میں اضافے پٹرولیم مصنوعات اور بجلی و گیس کے نرخ میں اضافے اور دیگر مسائل کی وجہ سے ہنوز پریشانی کا شکار ہے کاروباری برادری کوموجودہ حکومت سے بڑی توقعات وابستہ ہیں۔برآمدات میں اضافے کے لئے ریفنڈز بلا تاخیر جاری کیے جائیں اور صنعتی شعبے کے لئے بجلی و گیس کی قیمتوں میں فوری کمی کی جائے ی حکومت بنے سے کاروباری طبقہ کے اعتماد میں اضافہ ہو گا جو ملکی سا لمیت اور اور استحکام میں ایم کردار ادا کرے گا۔ اس موقع پر سابق صدور لاہور چیمبر و پیاف میاں شفقت علی،محمد علی میاں، سہیل لاشاری ودیگر نے بھی خطاب کیا ۔

Check Also

امریکی کمپنی ‘کارگل’ کا پاکستان میں 20 کروڑ ڈالر کی سرمایہ کاری کا اعلان

اسلام آباد: امریکی فوڈ اینڈ ایگریکلچر کمپنی کارگل نے پاکستان میں 20 کروڑ ڈالر کی ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *