Home / کالم / وعدے نبھاوے جیہڑے کیتے ہانی

وعدے نبھاوے جیہڑے کیتے ہانی

 

 

 

وعدے نبھاوے جیہڑے کیتے ہانی
تحریر:علی جان (لاہور)
ہرکوئی کہتا ہے کہ 25جولائی2018 پاکستان کی تاریخ میں تبدیلی لے کرآیا مگرسرائیکی وسیب جسے نام کچھ لوگ جنوبی پنجاب کا نام بھی دیتے ہیںتواس علاقے میں کہیںپربھی تبدیلی نظرنہیں آئی سوائے باتوں کے حالانکہ جب عثمان بزدارکانام وزیراعلیٰ کیلئے دیا گیا توسرائیکی وسیب میں خوشی کے ڈھول بجائے گئے اورمٹھائیاں بھی تقسیم کی گئیں بھئی کیوں نہ خوش ہوتے اس علاقے کا بیٹا جو وزیراعلیٰ بن رہا تھا مگربزدارصاحب کی مثال گھرکے ان بیٹوں جیسی ہے جو گھر میں توہوتے ہیں مگرگھرکے نہیں ہوتے ہم بزدارپرپھرکبھی بات کریں گے پہلے بات کرتے ہیں اپنے وزیرعظم صاحب کی جنہوں نے حکومت میں آنے سے پہلے ہمارے آگے 100دن کے پلان رکھے اورہم نے اپنا قیمتی ووٹ دے کرانہیں کپتان پاکستان بنا دیاجیسا کہ سننے میں آتارہتا ہے کہ خان صاحب مشکل فیصلے کرنے کے ماہرمانے جاتے ہیں توانہوں نے نئے پاکستان کوقائداعظم کے خواب کے مطابق بنانا ہے جس کیلئے ہم ان کے ساتھ ہیں خان صاحب نے اپنی ٹیم کے ساتھ مل کر 100دن کا ایجنڈہ چھ نکات پرمشتمل تھاسب سے پہلے خان صاحب نے کہا تھا ہم حکومت اورطرزحکومت میں تبدیلی کریں گے اورہم ریاست کے اداروں کو اس طرح بنائیں گے کہ وہ ایمانداری جرا¾ت مندی اورآزادانہ کام کرسکیں گے اورحکومتی اداروں کو گاﺅںاورقصبوں تک منتقل کریں مگرخان صاحب آپ تو بنی گالی سے سرائیکی وسیب کا راستہ تک بھول گئے الیکشن سے پہلے آپ ملتا ن ڈی جی خان یادرہتا تھا مگراب ان شہروں کے نام بھی آپکو یاد ہیں یا صرف بنی گالہ،لاہوراورکراچی ہی ذہن میں رکھا ہوا ہے؟آپ نے یہ بھی کہا تھا کہ احتساب کا عمل غیرجانبدارانہ ہوگالیکن عام عوام کا کہنا ہے کہ آپ نے شاید احتساب کا کھیل صرف ن لیگ کیلئے ہی رچا تھا جوابھی تک چل رہا ہے کیونکہ جہانگرترین نااہل ہوکربھی سرکاری وغیرسرکاری سرگرمیوں میں نظرآتے رہتے ہیں آپ نے یہ بھی کہا تھا کہ غریب لوگوں کو بااختیارکریں گے مگران کو بااختیارکرنے کے بجائے آپ نے ان پرمزیدمہنگائی کا بوجھ لاد دیا ہے تاکہ وہ دووقت کی روٹی بھی کیوں کھارہے ہیں اورایک مزے کی بات آپ نے کی تھی کہ پولیس کوغیرسیاسی اورطاقتوربنائیں گے جس پرآپ نے خوب عمل کیا اورپولیس کو یہ تونہیں پتاغیرسیاسی کیا یانہیں مگرانہیں طاقتورضروربنادیا ہے جس وجہ سے پولیس غنڈوں سے بھی آگے نکل گئی ہے اورایسے لگتا ہے ہرپولیس والا وزیرہے جس سے ہرغریب آدمی پناہ مانگتا ہے ۔خان صاحب نے کہا تھا پاکستان تب تک مضبوط نہیں ہوسکتا جب تک وفاقی ادارے مضبوط نہ ہوں گے پاکستان کے وفاق کی مضبوطی کیلئے ”سرائیکی صوبہ کا بھی ذکرتھا“ کیا وہ صرف ذکرتھاجس کے ساتھ کراچی میں تبدیلی کے خواب دکھائے اور غریب علاقوں میں غربت ختم کرنے کیلئے مہم چلائیں گے جوصرف باتوں تک ہی رہی ان پرعمل تک نہ ہوا۔خان صاحب پاکستانی معیشت کوتبدیل کرنے اورترقی کو ویژن لے کروزیراعظم بنے تھے پاکستان تحریک انصاف کا اقتصادی منصوبہ پاکستان کے ہرفردکیلئے ہے جس میں نوجوانوں کو ایک کروڑ نوکریاں ملنی تھیں جس وجہ سے کروڑوں نوجوانوں نے اپنی سندیں،رزلٹ کارڈ اوراہم کاغذات کولش پش کرکے ایک کروڑ نوکری کی راہ تک رہے ہیں ،مینوفیکچرزکی بحالی اورچھوٹے درمیانے کاروبار کوفروغ دینا بھی ایجنڈے کاحصہ تھا اور کلین پنجاب کے پروجیکٹ نے ریڑھی بانوں کی ریڑھیاں نہرمیں پھینک کرچھوٹے کاروبارکو خوب فروغ دیا جس وجہ سے لوگ عمران حکومت کو دعائیں ہی دے رہے ہیں ،پانچ سالوں کی حکومت کرنے کیلئے 50,00000پچاس لاکھ مکانات کی تعمیرکا کہا گیا تھا جو صرف غریب لوگوں کیلئے ہوں گے مگرجب کہہ دیا ہے کہ یہ منصوبہ 5سالہ ہے تواس کیلئے کچھ کہنا ہی فضول ہوگا،اہم اداروں کی اصلاح کا کہہ کرہمارے خان بھول گئے کیونکہ آج بھی لوگ ایک کام کیلئے 100/100بارچکرلگاتے ہیں اوروہ تب تک نہیں ہوتا جب تک رشوت یا سفارش نہ ہو۔توانائی کے مسائل کوحل کرنا (آئے ہائے اس بارے میں کچھ کہنا فضول ہے کیونکہ سرائیکی وسیب کے لوگ روزمظاہرے کرکرکے اخباروں اورسوشل میڈیا پردھوم مچاتے ہیں جس کی خبرحکومتی نمائندوں کو ضرورہوگی)۔مجھے یادپڑتا ہے کہ خان صاحب نے زراعت کے مطابق بھی کچھ کہاتھاکہ زراعت پاکستان کیلئے زندگی کی مانند ہے آپ نے کہا تھا حکومت میں آتے ہی کسانوں کا منافع بڑھانے کیلئے زراعت کے شعبہ میں ایمرجنسی نافذکریں گے،کسانوں کے قرضوں کی آسان فراہمی کو یقینی بنائیں گے ،زرعی منڈیوں میں اصلاحات لائیں گے ،مویشیوں کے شعبہ کوازسرنوتعمیرکریں گے ،پانی کی قومی پالیسی کو اپ گریڈ کریں گے مگرخان صاحب یہ باتیں بھی ابھی ادھوری ہیں اگرزراعت پاکستان کیلئے زندگی کی علامت ہے توزراعت کوبچانے والا کسان ڈاکٹرکی اہمیت رکھتا ہے توجولوگ ڈاکٹرکوتنگ کرے گا تو ڈاکٹرکا ایک ہی الفاظ ہوتا ہے SORRYتواسکا انجام سب جانتے ہی توبہترہے زراعت کے ڈاکٹروں کوبارے میں جلد سوچیں یہ نہ ہویہ آپکی حکومت کو انجکشن لگانا شروع کردیں ۔آپ کے ایجنڈے کا اہم ترین اوربنیادی نقطہ سماجی تبدیلی لاناتھاجس میں تعلیمی نظام میں تبدیلی لانے کا کہا تھااورغریب لوگوں کیلئے انصاف صحت کارڈ بنائیں گے جس سے غریب لوگ مفت علاج کراسکیں گے اوربے نظیرانکم سپورٹ پروگرام کووسیع کریں گے تاکہ غربت میں کمی ہوسکے مگرابھی تک ان باتوں کو صرف سن رہے ہیں کوئی عمل دکھائی نہیں دے رہا جس وجہ سے لوگ اس حکومت سے بھی مایوس نظرآتے ہیں عمران خان کے ایجنڈے میں اہم ترین بات تھی کہ پاکستان دنیا کے دیگرممالک کے ساتھ اچھے اوربرابری کی بنیادپرتعلقات قائم کرے اورحکومت پاکستان کے اندراورباہرریاست کی سالمیت کا خیال رکھے اس بات کا عمل قریشی صاحب کی اقوام متحدہ کے خطاب میں نظرآیااگرپی ٹی آئی کی حکومت کوکامیاب ہونا ہے تو 100دن یادرکھتے ہوئے اپنے وعدوں کوجلد از جلد پوراکریں یہ نہ ہولوگ احتجاج پراترآئیں جس سے مستقبل میں صرف اورصرف پی ٹی آئی کی حکومت کو نقٓصان ہوگا۔

Check Also

بعثت و نبوتﷺ پر ایمان کی معراج

بعثت و نبوتﷺ پر ایمان کی معراج تحریر۔۔۔ رشید احمد نعیم ، پتوکی حضور صلی ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *