Home / بزنس / ٹیکس کولیکشن کے طریقہ کار میں ریفامز لائی جائے۔

ٹیکس کولیکشن کے طریقہ کار میں ریفامز لائی جائے۔

 

لاہور( پ ر) ٹیکس کولیکشن کے طریقہ کار میں ریفامز لائی جائے۔ ان ریفامز اور پالیسزکوتمام چیمبرز، ٹریڈایسوسی ایشنز اور ایف پی سی سی آئی کو اعتماد میں لے کر بنایا جائے۔اندسٹری کی گیس بند ہوتی ہے تو لاکھوں لوگ بے روز گار ہوتے ہیں ۔حکومت کو ٹیکس سسٹم کو آسان بنانا چاہیے۔حکومت کو شناختی کارڈ کی شرط، سیلز ٹیکس رجسٹریشن اور دیگر مسائل کو باہمی رضا مندی سے حل کرناچاہیے۔کاروباری برادری کو عزت دی جائے۔ٹریڈ کو سپورٹ کرنے کے لےے نیشنل سنگل ونڈیو کے قیام کی ضرورت ہے۔ان خیالات کا اظہار فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری ( ایف پی سی سی آئی ) کے ریجنل چیئرمین عبدالرو¿ف مختار نے لاہور اکنامک جرنلسٹز ایسوسی ایشن( لیجا) کے ساتھ خصوصی اجلاس کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے مزید کہاکہ ملک میں کاروبار کے لےے سازگار ماحول کی ضرورت ہے،صنعت و تجارت سے متعلقہ حکومتی اداروں میں از سر نو ریفارمز کی ضرورت ہے۔ ہر کاروباری فرد ٹیکس دیتا ہے اور مزید ٹیکسز بھی دینا چاہتا ہے مگر پوری ملک کی کاروباری برادری کوحکومت کے ٹیکس لینے کے طریقہ کار سے اختلاف ہے جب تک ٹیکس کولیکشن میں ریفامزنہ لائی جائے تب تک یہ ٹیکس کے معاملات حل نہیں ہو سکتے۔ ان ریفامز اور پالیسزکوتمام چیمبرز، ایسوسی ایشنز اور ایف پی سی سی آئی کو اعتماد میں لے کر بنایا جائے۔رو¿ف مختار کا مزید کہنا تھا کہ ہمارا ٹیکس سسٹم اتنا پیچیدہ ہے کہ ایک پروفیشنل پرسن بھی اپنی انکم ٹیکس ریٹرن خود جمع نہیں کروا سکتا ہے۔حکومت کو کاروباری برادری کے تمام جائز مطالبات کو ماننا چاہیے۔کاروبار کرنے میں آسانیاں پیدا کرنے کے لےے مزید اقدامات کی ضرورت ہے۔حکومت مقامی صنعت کو تحفظ فراہم کرنے کے لےے اقدامات کرئے۔صنعت و تجارت کی بہتری کے لےے مل کر کردار ادا کیا جائےگا۔ملک سے ایکسپورٹ کی جانے والی پروڈکٹز کی بین الاقوامی معیار کی ٹیسٹنگ لیب کا فقدان ہے ،ملک میں بین الاقوامی سٹینڈڈ کے مطابق ٹیسٹنگ لیب قائم کی جائے۔انہوں نے مزید کہاکہ اگر حکومت معاشی صورت حال کو بہتر کرنا اور کاروباری افراد کی حوصلہ افزائی کرنا چاہتی ہے توان کو ٹیکس سسٹم کو از سر نو جائزہ لے کر نیا اور سادہ سسٹم معارف کروانا ہو گا۔ سب مشکلات کے باوجود ہماری کاروباری برادری اپنے کاروبار کو فروغ دےنے اور ملکی معیشت کی بہتری میں اپنا حصہ دال رہی ہے جو قابل تعریف ہے۔ پوری دنیا نے فضائی آلودگی پر قابو پانے کے لےے اپنی انڈسٹری بند نہیں کی ہے بلکہ اس پر قابو پانے کے لےے اپنی ذمہ داری پوری کی ہے، ہمارے ہاںحکومتی ادارے ذمہ داری پوری کرنے کی بجائے ایسی اقدامات کرتے ہیں جن سے انڈسٹری ہی بند ہو رہی ہے۔ ایف پی سی سی آئی نے حکومت کے برابر 100ملین ٹری کمپئین چلائی جس میں پورے ملک کے تمام چیمبرز، ایسوسی ایشن اور انڈسٹری میں درخت لگائے گئے۔انڈسٹری چلے گئی تو باقی سب شعبے بھی چلے گئے، لوگوں کو روزگار ملے گا تو سماجی مسائل پر بھی قابو پا جا سکیں گا۔

لاہور: ایف پی سی سی آئی کے ریجنل چیئرمین عبدالرو¿ف مختار پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے ہیں ان کے ہمراہ پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن کے مرکزی چیئرمین محمد عاصم رضا، لیجا کے صدر اشرف مہتاب اور دیگر بھی موجود ہیں۔

Check Also

ایف پی سی سی آئی کی نائب صدر روحی رضوان کے ایصال ثواب کے لئے قرآن خوانی اور بلند درجات کے لئے خصوصی دعا ئیں، صدر ایف پی سی سی آئی میاں انجم نثار نے روحی رضوان کے انتقال پر تعزیت اور گہرے رنج و غم کا اظہار کیا                      

    ایف پی سی سی آئی کی نائب صدر روحی رضوان کے ایصال ثواب ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *