Home / کالم / پےپلز پارٹی کے خلاف انتقامی کاروائیوں کا نیا دور

پےپلز پارٹی کے خلاف انتقامی کاروائیوں کا نیا دور

پےپلز پارٹی کے خلاف انتقامی کاروائیوں کا نیا دور
تحریر: زاہد مغل
سیکرٹری اطلاعات پاکستان پیپلزپارٹی برطانیہ

پاکستان میں نہ صرف درجہ حرارت زیادہ ہو نے کی وجہ سے گرمی کی شدت میں اضافہ ہو رہا ہے بلکہ سیاسی درجہ حرارت بھی بڑھتا جا رہا ہے، اور چیرمین بلاول بھٹو زرداری کی نیب میں پیش کئے موقع پر پولیس کے جیالوں پر وحشیانہ لاٹھی چارج اور واٹر پمپ اور آنسو گیس کے بے دریغ استعمال نے اسلام آباد کے ڈی چوک کو میدان جنگ میں تبدیل کر دیا،اور افسوس ناک واقعہ یہ تھا کہ پاکستان پیپلزپارٹی کے پر امن اراکین قومی اسمبلی خواتین ممبران اسمبلی پر لاٹھی چارج کے ساتھ انھیں لاک اپ میں بند بھی کر دیا گیا۔ایم این اے شاہدہ رحمانی، ایم این اے شازیہ مری،ثوبیہ عزیز بھی اس تشدد کا نشانہ بن گئے۔

اس واقعے کی مذمت نہ صرف پی پی پی کی قیادت کی طرف سے بھر پور انداز میں ہوئی بلکہ تمام پارلیمانی جماعتوں اور سول سوسائٹی نے اس پر شدید احتجاج کیا،اور پاکستان پیپلزپارٹی کی قیادت نے اسے بھر پور انداز میں میڈیا میں پیش کیا اور لوگ خواتین ممبران اسمبلی کے ویڈیو پیغامات دیکھنے کے بعد یہ سوچنے پے مجبور ہو گئے کہ جب خواتین ممبران اسمبلی کو پرامن احتجاج کے نتیجے میں تشدد کا نشانہ بنایا جا سکتا ہے تو عام آدمی کیوں کر محفوظ ہو سکتا ہے۔ابھی اس واقعہ کی گردن بیٹھی بھی نہیں تھی کے اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق صدر آصف علی زرداری اور میڈم فریال تالپور کی ضمانت منسوخ کر دی اور نیب نے آصف علی زردارءصاحب خو اپنی تحویل میں لے لیا،اسلام آباد زرداری ہاوس سے جس طرح جناب سابق صدر کو گرفتار کیا گئا،وہ نہ قانونی تقاضے پورے کرنے ہے اور نیا سیاسءو اخلاقی اور پھر اسمبلی میں چیرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلا ول بھٹو زرداری کو بات نہیں کرنے دی گئی اور اجلاس کو عجلت میں بھونڈے طریقہ سے ختم کر دیا گیا۔

اب صورتحال یہ ہے کے بجٹ اجلاس شروع ہو گیا ہے اور پاکستان پیپلزپارٹی اور دیگر اپوزیشن کی جماعتوں خود احتجاج کے باوجود سابق صدر آصف علی زرداری اور دیگر ممبران اسمبلی کو اجلاس میں بلانے کے پرو ڈکشن آرٹیکل پرسپیکر نے انکار کر کے پارلیمانی تاریخ کو داغدار کر کے اپنے اپنے کو متنازعہ کر لیا ہے۔جب کہ پاکستان پیپلزپارٹی کے دور حکومت میں سپیکر یوسف رضا گیلانی نے ممبر انفارمیشن کے پروڈکش آرڈر کے ذریعے ممبران کو اسمبلی اجلاس میں شریک کرایا ۔جس میں موجود وزیر ریلوے شیخ رشید احمد بھی شامل ہیں ۔شاید سیاسی و جمہوری روایات کے لیے صرف پاکستان پیپلزپارٹی کی قیادت کو ہی قر بانی دینے پر تیار ہے کے اس لیے کے اس ملک میں جھموریت اور آئین کی بالادستی کے لیے اپنی جانیں دیں۔

اس لیے حکومت کی طرف سے کیے گئے انتہائی اشتعال انگیزی کے باوجود پارٹی کی قیادت نے انتشار کی سیاست سے پرہیز کیا ہے کے وہ اس سیاسی نظام کو کمزور کرنے کے حق میں نہیں اور قانونی اور سیاسی طور پر مقابلے کے لیے تیارہیں ۔حکومت کو چاہیے کے وہ درخت کو ہی کھو کھلا نہیں کرےں جس پر وہ خود بےٹھے ہیں۔جس پرہے اور ملک کا سیاسی ماحول پرامن رکھنے کے لیے انتقام کے بجاے تحقیقات کی روشنی میں قانون کے مطابق عمل درآمد کرے نہ کے نیب کو سیاسی مخالفین کءخلاف بطور ہتھیار استعمال کرے اور وہ روایات قائم کریں کے کل جب وہ اپوزیشن میں یوں تو وہ سہ سکیں۔پاکستان کی سیاسءتاریخ جب بھی لکھی جاے گئی پاکستان پیپلزپارٹی کا کردار سنہری حروف سے لکھا جائے گا۔

Check Also

حجاج کرام ان امور پر خاص توجہ دےں

حجاج کرام ان امور پر خاص توجہ دےں حج اےسی عبادت ہے جوزندگی مےں اےک ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *